Home / Motivational Quotes / Alfaz Ya Behktey Angarey

Alfaz Ya Behktey Angarey

الفاظ جب تک ہماری دسترس میں ہیں ہم اس قابل ہیں کہ انہیں نکھار کے پھولوں سا معطر بنا دیں، یا جلتے انگارے کی شکل میں ڈھال دیں۔
لفظوں میں بہت تاثیر رکھی گئی ہے، یہ انسانوں کی زندگیوں کا رخ بدل دیتے ہیں۔مردہ دلوں کو زندہ اور زندہ دلوں کو پل بھر میں مرجھا کر زندہ درگور کر سکتے ہیں ۔
لفظوں کو کسی کی سمت روانہ کرتے ہوئے پل بھر کو یہ ضرور سوچنا چاہیے کہ یہ لفظ ہماری سمت ہوتے تو کیا اثر ڈالتے؟
وہ الفاظ ہی ہیں جو احساس بتاتے ہیں، وہ الفظ ہی ہیں جو پیار جگاتے ہیں، وہ الفاظ ہی ہیں جو نزدیکیاں بڑھاتے ہیں اور تو اور وہ الفاظ ہی ہیں جو دوریاں بڑھاتے ہیں۔
تو سنبھل کے رہنا ان لفظوں کی دنیا میں کیونکہ چوٹ بھی یہی دیتے ہیں اور مرہم بھی یہی لگاتے ہیں۔ ستم بھی یہی ڈھاتے ہیں اور کرم بھی یہی لاتے ہیں۔
الفاظ کا چناؤ سوچ سمجھ کر کریں آپ کے الفاظ آپ کی تربیت خاندان اور آپ کے مزاج کا پتہ دیتے ہیں بے لگام الفاظ بے لگام جانور کی مانند ہوتے ہیں۔
الفاظ چابیوں کی مانند ہیں ان کا صحیح استعمال کر کے لوگوں کے منہ بند یا دل کھولے جا سکتے ہیں
اچھے الفاظ اور اچھے خیالات ہی خوبصورتیاں تخلیق کرتے ہیں، جس چہرے کے ساتھ ہم پیدا ہوتے ہیں وہ ہمارا انتخاب نہیں ہوتا مگر جس چہرے کے ساتھ ہم مرتے ہیں اسے تراشنے کے ذمہ دار ہم خود ہوتے ہیں، وہ ہمارے لفظ ،خیال و خواب اور دعاؤں کا عکس ہوتا ہے۔
اچھے الفاظ پر کچھ خرچ نہیں ہوتا ہے لیکن اچھے الفاظ سے بہت کچھ حاصل ہوتاہے۔ الفاظ ہی سب کچھ ہوتے ہیں دل جیت بھی لیتے ہیں دل چیر بھی دیتے ہیں۔
ہم لفظ بھول سکتے ہیں لیکن ان کی شدت نہیں۔لفظ کہنے والوں کا کچھ نہیں جاتا ،لفظ سہنے والے کمال کرتے ہیں۔
کچھ الفاظ محض الفاظ نہیں ہوتے وہ کیفیت ہوتی ہے سمجھ تب ہی آتے ہیں جب خود آپ پر سے گزرتی ہے۔
لفظوں سے دیے گئے زخم کبھی نہیں بھرتے،ننھے ننھے الفاظ بڑے بڑے گھاؤ لگانے کی طاقت رکھتے ہیں۔
کبھی کبھی زندگی میں ایسا وقت آتا ہے جب الفاظ گونگے ہوجاتے ہیں اور احساسات چیخنے لگتے ہیں

صحیح وقت میں دو لفظ نہ بولے جائیں تو وقت گزر جانے کے بعد لمبی کہانیاں سنانا بے کار جاتا ہے
محبت کا احساس بھی لفظوں کا محتاج ہوتا ہے کیوں کہ فاصلوں میں یہ لفظ ہی ہوتے ہیں جو ایک دوسرے کا احساس دلائے رکھتے ہیں۔
کچھ لوگ تو اپنے خلاف ایک لفظ بھی برداشت نہیں کر سکتے لیکن اپنا زیادہ تر وقت دوسروں پر تنقید میں صرف کر رہے ہوتے ہیں۔
لہجے اور الفاظ کی خوبصورتی وہ خصوصیات ہیں جو آپ کو ان دیکھے انسان کا دیوانہ بنا دیتے ہیں
دنیا میں بیشتر فتنے الفاظ کی وجہ سے جنم لیتے ہیں، الفاظ ہی نفرتوں کے بیج بوتے ہیں اور انہی الفاظ سے امن و سکون اور انسانیت کا ماحول بھی قائم کیا جاسکتا ہے ۔
الفاظ کے ذریعے انسان معمولی سی نفرت کی چنگاری کو فتنے کی آگ میں بدل سکتا ہے اور الفاظ کے ذریعہ ہی بہت سے فتنوں کو پیدا ہونے سے پہلے ہی ختم کر سکتا ہے، لہذا ہمیشہ پہلے الفاظ کا انتخاب کریں اور پھر بولیں۔
ضروری نہیں کہ ہر لکھا جانے والا لفظ پڑھنے والے کے معیار کے مطابق ہو، کیونکہ لکھنے والا اپنی کیفیت میں ہوتا ہے ، جب کہ پڑھنے والا اپنی کیفیت میں ہوتا ہے۔
اردو سینٹر پلس

About admin

Check Also

Dukhti Rug

Dukhti Rug    

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *